آرکائیوز برائے

منتخب شدہ

سندھ کی وزارتِ داخلہ نے 23 فروری کو کراچی کے لیے دہشت گردی کا ایک انتباہ جاری کیا تھا، جس میں متعلقہ حکام سے حفاظتی اقدامات میں اضافہ کرنے کے لیے کہا گیا ہے۔

ایران کی طرف سے فنڈ کردہ اور تربیت شدہ طالبان عسکریت پسندوں کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ اس تقریب پر حملہ کریں جس میں پاکستان کے وزیراعظم ایک اہم پائپ لائن منصوبے کا افتتاح کرنے والے ہیں۔ طالبان نے اس حکم کی خلاف ورزی کی اور ہتھیار ڈال دیے۔

تربیت کا مقصد سرکاری ملازمین کو دہشت گردی اور پرتشدد انتہاپسندی کے واقعات کے بعد میڈیا کے ذریعے عوام کو معلومات فراہم کرنے کے لیے تیار کرنا ہے۔

نیا افتتاح شدہ مرکز، جو خیبر پختونخواہ میں ایسا پہلا مرکز ہے، تشدد اور دوسرے جرائم کی متاثرہ خواتین اور بچوں کو مفت قانونی خدمات فراہم کرے گا۔

یہ دعویٰ کرنے کے باوجود کہ ان کا مقصد اسلام میں جائز ہے، عسکریت پسند ناجائز ذرائع جیسا کہ منشیات کی اسمگلنگ کے ذریعے دولت بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

یکم دسمبر کو طالبان جنگجوؤں کی طرف سے حملے میں نو جانیں لینے کے تقریباً دو ماہ بعد پشاور میں حال ہی میں نام تبدیل ہونے والی ایگریکلچر سروسز اکیڈمی پر علمی سرگرمیاں دوبارہ شروع ہو گئی ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ طویل عرصے سے تاخیر شدہ ڈی این اے لیباریٹری اور کے پی پولیس کی فرانزک لیب کو جدید بنانا، ہائی پروفائل جرائم کی تحقیقات کو تیز تر کر دے گا۔

ایک حالیہ انٹرویو میں افغانستان کے نیشنل ڈائریکٹوریٹ آف سکیورٹی کے سربراہ معصوم سٹانکزئی نے کہا کہ ثبوت یہ ثابت کرتے ہیں کہ ماسکو اور تہران طالبان کی مدد کر رہے ہیں۔

ایران کی حمایت رکھنے والے ایجنٹ ہزاروں پاکستانی نوجوانوں کو بہکا رہے ہیں کہ وہ ایسی جنگوں میں لڑیں جو صرف پاکستان کی حاکمیت کو نقصان پہنچانے اور تہران کے فرقہ ورانہ مقاصد کو مضبوط بنانے کا مقصد انجام دے رہی ہیں۔

امریکہ پاکستان کے اہم ترین تجارتی شراکت داروں میں سے ہے اور ان چند ممالک میں شامل ہے جن کے ساتھ پاکستان کو ہر سال تجارتی منافع ہوتا ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق، دہشت گردی اور عسکریت پسندی کے نتیجے میں 2 دہائی قبل والی تعداد سے زیادہ بچے مختلف دماغی عارضوں میں مبتلا ہیں۔

مستقبل کی ترجیحات میں سے ایک پاکستان کے ساتھ اس تجارتی خسارے کو کم کرنا ہے جو انڈونیشیا کے ساتھ موجود ہے اور دو طرفہ سرمایہ کاری کو بڑھانا ہے اور اس طرح اقتصادی تعلقات کو متنوع اور وسیع بنایا جا سکے گا۔

پاکستانی چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے بتایا، علاقائی امن اور استحکام کا راستہ افغانستان سے ہو کر گزرتا ہے۔

66 سالہ عاصمہ جہانگیر کی وفات اختتام ہفتہ پر حرکت قلب بند ہونے کے باعث ہوئی۔

عہدیداران کے مطابق بچوں کو جدید ٹیکنالوجی کی صلاحیتوں اور تعلیم سے آراستہ کرنا خیبرپختونخواہ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

ہر شعبہ زندگی سے تعلق رکھنے والے پاکستانی جنسی اور متشدد درندوں کے بارے میں آگاہی پیدا کر رہے ہیں جب کہ پولیس ایسے درندوں کو ڈھونڈ کر گرفتار کر رہی ہے۔

مشال خان، جس پر توہینِ مذہب کا جھوٹے الزام لگایا گیا تھا، کو پچھلے سال مردان میں عبدالولی خان یونیورسٹی میں ایک مشتعل ہجوم نے ہلاک کر دیا تھا۔

فرقہ ورانہ حملوں کی تعداد میں 2016 سے 2017 کے درمیان 44 فیصد کمی دیکھی گئی ہے جس کا سہرا سیکورٹی فورسز، سول سوسائٹی کی تنظیموں اور علماء کی مشترکہ کوششوں کے سر جاتا ہے۔

تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے ایک خودکش بمبار نے 3 فروری کو وادی سوات میں 11 فوجیوں کو شہید کر دیا۔

کوئٹہ کے تمام چھ داخلی اور خارجی مقامات کے ساتھ ساتھ شہر بھر میں دیگر اہم مقامات پر تقریباً 1,400 کلوزڈ سرکٹ ٹیلیویژن (CCTV) کیمرے نصب کیے جائیں گے۔

اییٹ کمانڈوز دہشت گرد حملوں، یرغمالی صورتحال اور دیگر ہنگامی صورتحال کے فوری جواب کے ذمہ دار ہوں گے۔

تازہ ترین خبریں