http://pakistan.asia-news.com/ur/articles/cnmi_pf/features/2019/08/23/feature-01
| ماحول

تصاویر میں: باجوڑ کے رہائشی ’پلانٹ فار پاکستان‘ کے ذریعے موسمیاتی تبدیلی کا مقابلہ کر رہے ہیں

حنیف اللہ

18 اگست کو فارسٹ آفیسر ضلع باجوڑ محمّد الیاس ’پلانٹ فار پاکستان‘ کے داران ایک پودا لگا رہے ہیں۔ [حنیف اللہ]

18 اگست کو ’پلانٹ فار پاکستان‘ مہم کے دوران ضلع باجوڑ میں سکول کے بچے ایک پودا لگا رہے ہیں۔ [حنیف اللہ]

18 اگست کو ضلع باجوڑ میں ایک طالبِ علم ایک پودا لگا رہا ہے۔ [حنیف اللہ]

18 اگست کو ڈپٹی کمشنر باجوڑ عثمان محسود ایک نئے لگائے گئے پودے کو پانی دے رہے ہیں۔ [حنیف اللہ]

18 اگست کو باجوڑ کے رہائشی پودے لگا رہے ہیں۔ [حنیف اللہ]

18 اگست کو ضلع باجوڑ میں نجی سکول کے طلبہ اور اساتذہ ایک پودا لگا رہے ہیں۔ [حنیف اللہ]

خار – باجوڑ کے رہائشی بدھ (18 اگست) کو ملک بھر سے ساتھی شہریوں کے ساتھ شریک ہوئے اور موسمیاتی تبدیلی کے اثرات سے مقابلہ کے دوران "پلانٹ فار پاکستان ڈے" نامی ایک مہم میں شامل ہوئے۔

ڈپٹی کمشنر باجوڑ عثمان محسود نے 18 اگست کو اس مہم کی افتتاحی تقریب کے دوران کہا کہ زیادہ سے زیادہ درخت لگانا ہی ماحولیاتی تبدیلی کے اثرات کو روکنے کا واحد راستہ ہے۔

انہوں نے کہا، "درخت لگا کر ہم اپنے ضلع اور ملک کو سبز تر اور صاف تر بنا سکتے ہیں۔ اگر ہم زیادہ درخت لگائیں تو ہمیں پانی کی قلت کا سامنا نہیں ہو گا اور ہمیں مستقبل میں ایک بہتر زندگی میسر ہو گی۔"

18 اگست کو باجوڑ کے ڈپٹی کمشنر عثمان محسود، دیگر عہدیداران، قبائلی عمائدین اور مقامی افراد ’پلانٹ فار پاکستان‘ کے لیے آگاہی پیدا کرنے کی غرض سے مارچ کر رہے ہیں۔ [حنیف اللہ]

ضلع باجوڑ کے ایک ڈویژنل فارسٹ آفیسر ہدایت علی نے کہا، "پاکستان ماحولیاتی تبدیلی سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے دس ممالک میں شامل ہے۔"

انہوں نے مزید کہا کہ خیبر پختونخوا محکمہٴ جنگلات اس مہم کے دوران 150,000 پودے تقسیم کرے گا اور لگائے گا۔

باجوڑ سے ایک عالمِ دین مفتی نور الحق نے کہا کہ اسلام زیادہ سے زیادہ درخت لگانے کے لیے مسلمانوں کی حوصلہ افزائی کرتا ہے اور درخت لگانا ایک قسم کا صدقہ ہے۔

باشندوں اور حکام کا کہنا ہے کہ ایسی ماحولیاتی سرگرمیاںقبائلی علاقوں میں عسکریت پسندی کی شکست اور قیامِ امنکے بعد ہی ممکن ہوئی ہیں۔

کیا آپ کو یہ مضمون پسند آیا
1
نہیں
تبصرے 0
تبصرہ کی پالیسی
Captcha