دہشتگردی

لاہور کے شہریوں نے دہشت گردوں اور تنبیہوں کے باوجود، حملے کو روکنے میں ناکام رہنے کے لیے حکومت پر سخت غصے کا اظہار کیا ہے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ دہشت گردی کے باوجود پاکستان میں جمہوریت تقویت حاصل کر رہی ہے۔

حکام نے حافظ سعید اور جماعت الدعوۃ کے چار ارکان کو ایسی سرگرمیوں میں ملوث ہونے پر گرفتار کر لیا ہے جو پاکستان کے اقوامِ متحدہ کے لیے فرائض کی خلاف ورزی ہیں۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ طالبان اپنے ہی اندرونی جھگڑوں کے گرداب میں پھنس رہے ہیں۔

عسکری اور مذہبی راہنماؤں کا کہنا ہے کہ دہشت گرد اپنی کھوئی ہوئی نسبت کو دوبارہ حاصل کرنے میں ناکام رہیں گے اور پاکستانی متحد ہی رہیں گے۔

ماہرین نے دیارونا کو بتایا کہ 'دولتِ اسلامیہ عراق و شام' کو گزشتہ سال سرمایے اور افرادی قوت دونوں کی صورتوں میں بھاری نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ وسط ایشیائی ممالک اور افغانستان عسکریت پسند تنظیموں سے اپنی سرحدوں کی حفاظت کے لیے کام کر رہے ہیں۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ انتہاپسندی کے خلاف جنگ میں لوگوں کی حمایت کو جیتنے کے لیے راہنماؤں کو گورنس کو بہتر بنانے اور سماجی انصاف کو یقینی بنانے کی ضرورت ہے۔

دہشتگرد حملوں کے متاثرین اور ان کے خاندان ان کی زندگیوں کو ہمیشہ ہمیشہ کے لیے بدل دینے والے دھماکوں کے طویل عرصہ بعد بھی صدمہ کے بعد کے اثرات کو جھیل رہے ہیں۔

ایران ایک مکارانہ دوہرا کھیل کھیل رہا ہے: عراق اور شام میں دہشت گردی کے خلاف جنگ کا دعویدار ہے جبکہ دوسری طرف پورے افغانستان میں سفاکی کی حمایت کر رہا ہے۔