دہشتگردی

مغربی افغانستان میں ایک سیکیورٹی ذریعہ کے مطابق، طالبان ایسا جدید اسلحہ استعمال کر رہے ہیں جو صرف روسی فوج کے پاس ہی دستیاب ہے۔

ملا رسول کی زیرِ قیادت کام کرنے والے طالبان کے ایک ذیلی گروہ کے نائب راہنما ملا منان نیازی نے کہا ہے کہ ملا ہیبت اللہ اخونزادہ کے وفاداروں نے انہیں قتل کرنے کے لیے تین خودکش بمباروں کو بھیجا ہے۔

درجن بھر سے زیادہ جاں بحق ہونے والوں میں دو پولیس اہلکار شامل ہیں جنہوں نے بمبار کو مزار میں داخل ہونے سے روکنے کے لئے اپنی جان قربان کر دی۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ عسکریت پسند پاکستان اور افغانستان کے درمیان برادارانہ تعلقات کے سخت خلاف ہیں اس لیے وہ ان کے تعلقات کو خراب کرنے کی کسی بھی کوشش کو ہاتھ سے نہیں جانے دیتے۔

ایک پاکستانی تھنک ٹینک کا کہنا ہے داعش کا شام لبنان سرحد پر ذلت آمیز شکست کے بعد محفوظ راہداری کا معاہدہ کرنا اشارہ ہے کہ گروہ جنگ جاری رکھنے کے قابل نہیں یا جنگ جاری نہیں رکھنا چاہتا۔

انسدادِ دہشت گردی کے حکام اس بات کی تفتیش کر رہے ہیں کہ پاکستانی دہشت گرد تنظیموں میں کیوں شامل ہو رہے ہیں۔

پولیس نے عید الاضحیٰ کی تقریبات کے دوران دہشت گردی کا ایک بڑا منصوبہ ناکام بنا دیا۔

انسدادِ منشیات کی افغان وزارت کے مطابق، غیر قانونی منشیات کی تجارت سے حاصل ہونے والا تقریبا 99 فیصد منافع دہشت گرد گروہوں اور منشیات کے گروہوں کو جاتا ہے۔

مشاہدین کا کہنا ہے کہ طالبان اور داعش کے سرگرم کارکن غیر موزوں طور پر بے گناہ شہریوں کو نشانہ بناتے اور ملک کی معیشت کے نقصان پہنچاتے ہیں اور اس کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے۔