دہشتگردی

حکام کا کہنا ہے کہ حکومت کے پاس داعش کے ساتھ الحاق شدہ جنگجو گروہوں کے ساتھ نمٹنے کی ایک جامع حکمتِ عملی ہے۔

بلوچستانی حکام نے قیام امن کی کوششوں میں اضافے کا عہد کرتے ہوئے کہا کہ فرقہ وارانہ فسادات میں ملوث عسکریت پسند کبھی اپنے مقاصد حاصل نہیں کر سکیں گے۔

ایران نے کسی دینی پاکیزگی کا مظاہرہ نہیں کیا کیونکہ یہ معمولاً طالبان اور القاعدہ جیسے دہشت گرد گروہوں کی حمایت، تربیت کرتا ہے اور انہیں سرمایہ فراہم کرتا ہے۔

رواں برس خیبرپختونخوا محکمۂ انسدادِ دہشتگردی نے ابھی تک 271 مشتبہ شرپسندوں کو گرفتار، 36 شرپسندوں کو ہلاک اور 504 کلو دھماکہ خیز مواد برآمد کیا۔

پاکستان داعش اور دیگر عسکری گروہوں کی جانب سے نفاق کا بیج بونے اور انتہاپسندی کے لیے سوشل میڈیا کے غلط استعمال کو روکنے کے لیے مصروفِ عمل ہے۔

کیپٹن روح اللہ نے ملک کی حفاظت کے لیے اس وقت اپنی جان قربان کر دی جب دہشت گردوں نے چوبیس اکتوبر کو کوئٹہ میں پولیس ٹریننگ سینٹر پر حملہ کر دیا۔

طالبان کے سفاکانہ سالوں کے دوران، کے پی اور فاٹا میں ذہنی بیماریوں میں انتہائی زیادہ اضافہ دیکھا گیا ہے۔

آئی ایس آئی ایل نے اس وحشیانہ حملے کی ذمہ داری قبول کر لی۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اپنے تشخص کو بہتر بنانے اور قومی مفادات کا تحفظ کرنے کے لیے، پاکستان پر لازم ہے کہ دنیا میں امن اور تحفظ کی حمایت کرنے کی اپنی طویل تاریخ کو نمایاں کرے۔

پولیس عوام کو ترغیب دے رہی ہے کہ وہ مشکوک سرگرمیوں اور عناصر کی اطلاع حکام کو دے کر انسدادِ دہشت گردی کی کوششوں میں تعاون کریں۔