معاشرہ

مصنفین اس آغاز کا خیرمقدم کر رہے ہیں، جو خیبرپختونخوا میں مصنفین کے لیے تربیت، ایک پلیٹ فارم اور ایک آن لائن نیٹ ورک فراہم کرنا چاہتا ہے۔

پاکستان کے شمالی علاقہ جات اپنے دلکش نظاروں کی وجہ سے معروف ہیں۔

حکومت 500 فنکاروں کو 30,000 روپے (300 ڈالر) وظیفہ دے رہی ہے، ان میں سے متعدد عسکریت پسندوں کے ہاتھوں متاثر ہوئے ہیں۔

گرمیوں کے مہینوں کے دوران اندرون و بیرونِ ملک سے اس الپائن جھیل پر سیّاح آتے ہیں۔

صرف 4،100 نفوس پر مشتمل، کیلاش کے لوگ ہندوکش سے گھری دلفریب نظاروں والی وادی کے مکین ہیں۔

جدید آٹا ملوں کی آمد کے باوجود، اناج کو آٹے میں پیسنے کا صدیوں پرانا پن چکی کا طریقہ ابھی تک مقبول ہے۔

تین روزہ میلے میں مقامی فنکاروں کے کام کی نمائش کی گئی اور روایتی موسیقی اور کھانے پیش کیے گئے۔

حکام نے عسکریت پسندی کی شکست کو اجاگر کرنے کی غرض سے تین ماہ کی سرگرمیوں کا ارادہ کیا ہے۔

شہری کئی سالوں کی دہشت گردی اور خوف کے بعد، ثقافت، موسیقی اور فیشن کی تقریبات کا انعقاد کر کے اپنی دوبارہ ابھرنے کی قوت کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔

دہشت گرد گروہ اور جرائم پیشہ عناصر شہریوں کو دھوکہ باز خیراتی اداروں کو عطیات دینے کے لیے پھانستے ہیں۔