سلامتی

اعدادوشمار کے مطابق آپریشن ضرب عضب اور آپریشن ردالفساد نے ملک بھر میں عسکریت پسندوں کے خود کش حملے کرنے کی صلاحیت بڑی حد تک ختم کردی ہے۔

تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اضافے سے، دہشت گردی کے خلاف جنگ اور دیرپا امن کے قیام کے لیے حکومت کی سنجیدگی کا اظہار ہوتا ہے۔

داعش اور ٹی ٹی پی سمیت مختلف عسکریت پسند گروہ آپریشن کا نشانہ ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ عید الفطر کے چار دنوں میں 3 ملین سے زائد سیاحوں نے صوبے کی سیر کی۔

چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کرم ایجنسی میں قبائلی بزرگوں سے ملاقات کے دوران اضافی حفاظتی اقدامات کا اعلان کیا۔

فاٹا میں عسکری آپریشنز اور کے پی پولیس اور محکمۂ انسدادِ دہشتگردی کی کاروائیوں نے تشدد اور شرحِ جرائم میں کمی کر دی ہے۔

اس منصوبے کا مقصد عسکریت پسندوں کی سرحد پار نقل و حرکت کو روکنا اور علاقائی سیکورٹی کو بہتر بنانا ہے۔

مسلمان ممالک نے سعودی قیادت کی عسکری فورس میں 34,000 کی ریزرو فورس فراہم کرنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ پشاور کے شہری مراکز اور داخلی مقامات پر اضافی پولیس تعینات کر دی گئی ہے۔

پاکستان نے ایرانی کی سرحد پار بڑھتی ہوئی جارحیت اور بین الاقوامی قوانین کو نظرانداز کرنے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔