سلامتی

پولیس کا کہنا ہے کہ عید الفطر کے چار دنوں میں 3 ملین سے زائد سیاحوں نے صوبے کی سیر کی۔

چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کرم ایجنسی میں قبائلی بزرگوں سے ملاقات کے دوران اضافی حفاظتی اقدامات کا اعلان کیا۔

فاٹا میں عسکری آپریشنز اور کے پی پولیس اور محکمۂ انسدادِ دہشتگردی کی کاروائیوں نے تشدد اور شرحِ جرائم میں کمی کر دی ہے۔

اس منصوبے کا مقصد عسکریت پسندوں کی سرحد پار نقل و حرکت کو روکنا اور علاقائی سیکورٹی کو بہتر بنانا ہے۔

مسلمان ممالک نے سعودی قیادت کی عسکری فورس میں 34,000 کی ریزرو فورس فراہم کرنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ پشاور کے شہری مراکز اور داخلی مقامات پر اضافی پولیس تعینات کر دی گئی ہے۔

پاکستان نے ایرانی کی سرحد پار بڑھتی ہوئی جارحیت اور بین الاقوامی قوانین کو نظرانداز کرنے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

18 جون کو پاکستان کی کرکٹ میں فتح کی خوشی میں ہوائی فائرنگ میں کم از کم 33 افراد زخمی ہوئے تھے۔

عسکری آپریشنز نے مساجد پر دہشتگردانہ حملوں میں کمی لانے میں کردار ادا کیا ہے، جو کہ 2012 میں 18 کی حد سے کم ہو کر رواں برس صفر تک آ گئے ہیں۔

دہشتگردی کا مقابلہ کرنے والی پولیس کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے اب اس فورس کے پاس عملہ کو لے جانے والی 14 بکتر بند گاڑیاں اور 61 بکترسے لیس گشتی ویگنیں ہیں۔