مذہب

طالبان نے کانفرنس کے بائیکاٹ کا مطالبہ کیا تھا مگر بہت سے علماء اور مشائخ نے عسکریت پسندوں کو نظر انداز کر دیا اور اعلامیہ جاری کیا جس میں کہا گیا کہ "دہشت گردی اسلامی قانون کی خلاف ورزی ہے"۔

حکام کا کہنا ہے کہ اس قدم سے معاشرے میں نماز کے قائدین کا مقام بلند ہو گا اور انتہاپسند بھرتی کاروں یا دیگر کی طرف سے انہیں بھرتی کرنے کی کمزوری میں کمی آئے گی جو ان پر اثرانداز ہونے کی کوشش کرتے ہیں۔

جاری ہونے والے ایک تازہ فتوے کے مطابق، خودکش بمبار، نیز وہ جو ان کی کفالت اور تربیت کرتے ہیں، ریاست اور اسلام کے غدار ہیں۔

کنجور پتھر پر کھدے ہوئے تقریباً 1،700 سال پرانے مجسمے کی دریافت کا اعلان نومبر میں کیا گیا تھا۔

مشاہدین کا کہنا ہے کہ یہ کلاسیں سکھوں کے لیے مذہبی فریضہ ہیں، لیکن امن اور مذہبی رواداری کو بھی فروغ دیتی ہیں۔

فی الحال حکومت صوبے میں مساجد اور آئمہ کی تعداد سے متعلق اعداد وشمار جمع کر رہی ہے۔

محرم الحرام کا آغاز 21 ستمبر کو متوقع ہے۔

حکام انتہاپسند گروہوں کو نادانستہ طور پر دیے جانے والے خیراتی عطیات کو ختم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

تیس سے زیادہ عالموں نے متفقہ طور پر اتفاق کیا کہ کہ خودکش دھماکے اور دہشت گردی کے تمام کام حرام ہیں۔

نیشنل ایکشن پلان (این اے پی) کے تحت، صوبائی حکومت نے 'مشکوک سرگرمیوں' کی وجہ سے 2،311 مدارس کو بند کر دیا ہے۔

1