جرم و انصاف

گزشتہ دو برس میں نفاذِ قانون کی ایجنسیوں نے 1,865 دہشتگردوں کو ہلاک اور 5,611 ملزمان کو گرفتار کیا۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ان اداروں میں تربیت حاصل کرنے والے پولیس افسران سیکورٹی کو بہتر بنانے کے لیے زیادہ بہتر طور پر تربیت یافتہ ہیں۔

حکام نے صحافت کے طالبِ علم، جس پر توہینِ رسالت کا الزام تھا، کے بہیمانہ قتل کے سلسلہ میں متعدد ملزمان کو گرفتار کر لیا۔

انسپکٹر جنرل آف پولیس صلاح الدین خان محسود نے کے پی کے انسدادِ دہشت گردی کے شعبہ کی دو سال سے زیادہ عرصے تک سربراہی کے بعد 30 مارچ کو عہدہ سنبھالا۔

حمایتیوں کا کہنا ہے کہ فوجی عدالتوں میں دہشت گردوں پر تیز رفتاری سے مقدمات چلنا ضروری ہیں۔ لیکن حقوق کی تنظیموں کو کچھ سنگین تشویشیں ہیں۔

سٹیٹ بینک آف پاکستان نے جدید ٹیکنالوجی کے ساتھ نیا ڈیٹا ٹریکنک سینٹر قائم کیا ہے تاکہ مشکوک لین دین کا پتہ لگایا جا سکے۔

محکمہ کئی انواع کی سماجی برائیوں کے خلاف لڑنے کے لیے عمائدین کی مدد چاہتا ہے۔

دو لاکھ ساٹھ ہزار مجرموں کے بارے میں تفصیلات اب صوبائی کرمنل ریکارڈ منیجمنٹ سسٹم کا حصہ ہیں۔

پاکستان میں نفرت اور عسکریت پسندی کے پھیلاؤ کا انسداد کرنے کے لیے حکومت غیر ممالک کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ پشاور میں اعلیٰ تربیت یافتہ افسران پر مشتمل یہ نئی فورس 12 منٹ کے اندر کسی بھی ہنگامی صورتِ حال، جرم یا دہشتگردانہ کاروائی پر ردِّ عمل دینے کے لیے لیس ہے۔