|

فاٹا ایک ہفتے کے اندر اندر برطانوی دور کے قوانین منسوخ کر دے گا

پاکستان فارورڈ

اسلام آباد -- ڈان نے خبر دی ہے کہ جمعہ (8 دسمبر) کے روز وزیر برائے ریاستیں اور سرحدی خطے عبدالقادر بلوچ نے کہا ہے کہ توقع ہے کہ پاکستانی حکومت ایک ہفتے کے اندر اندر وفاق کے زیرِ انتظام قبائلی علاقہ جات (فاٹا) میں برطانوی دور کے فرنٹیئر کرائمز ریگولیشن (ایف سی آر) کو منسوخ کر دے گی۔

ایف سی آر سنہ 1901 میں برطانوی راج کے دوران قائم کیا گیا تھا۔ قانون کے تحت، فاٹا کے مکینوں کو اپیل کرنے، قانونی نمائندہ (وکیل) پیش کرنے اور ثبوت (دلیل) پیش کرنے کا حق حاصل نہیں ہے۔ اس میں اجتماعی سزا کی رسم بھی شامل ہے، جو سرکاری حکام کو افراد کے جرائم کے لیے پورے قبیلے کو ذمہ دار ٹھہرانے کی اجازت دیتا ہے۔

بلوچ نے صحافیوں کو بتایا، "ایف سی آر کالا قانون ہے۔ یہ ضروری ہے کہ ہم اس سے چھٹکارا پا لیں،" انہوں نے مزید کہا کہ قانون ایک ہفتے کے اندر اندر منسوخ کر دیا جائے گا۔

بلوچ نے کہا کہ گورنر خیبرپختونخوا جلد ہی ایف سی آر کو منسوخ کرنے کے لیے صدر ممنون حسین کو ایک سمری ارسال کریں گے۔

کیا آپ کو یہ مضمون پسند ہے؟

Pf icons no 0

تبصرہ 💬

* لازم خانوں کی نشاندہی کرتا ہے
Captcha

انتخاب

افغانستان میں طالبان کے ممکنہ امن مذاکرات میں پاکستان کو کیا کردار ادا کرنا چاہیئے؟

نتائج